You are here

بڑی نا پاکی اور غسل

×

Error message

Deprecated function: Function create_function() is deprecated in views_php_handler_field->pre_render() (line 202 of /var/www/drupal7-websites/sites/all/modules/contrib/views_php/plugins/views/views_php_handler_field.inc).

غسل کے واجبات:

وہ امور جن کے کرنے سے مسلمان پر نمازاور طواف کی ادائیگی سے پہلے غسل لازم ہوجاتا ہے اس کے غسل کرنے سے پہلے اس کی ناپاکی کو بڑی ناپاکی کہا جاتا ہے۔

اور یہ امور حسب ذیل ہیں:

  1. کسی بھی طریقہ سے منی کا انزال لذّت سے ہو، اور کسی بھی حالت میں ہو، چاہے وہ جاگتے ہوئے ہو یا سوتے ہوئے ہو۔
    منی وہ گاڑھا اور سفید بہنے والا مادّہ جو شہوت ولذّت کے ساتھ خارج ہو۔
  2. جماع: اس سے مراد مرد کی شرمگاہ کا عورت کی شرمگاہ میں داخل كرنا اگرچہ منی کا انزال ہو یا نہ ہو، غسل کے وجوب کے لیےمرد کی شرمگاہ کے اوپری حصّہ کا اندر داخل ہونا کافی ہے اللہ تعالیٰ نے فرمایا:۔ ((اور اگر تم جنابت کی حالت میں ہوتوغسل کرلو))۔ (المائدہ: 6)
  3. حیض ونفاس کے خون کا خارج ہونا :

حیض وہ طبعی خون ہے جو ہر مہینہ عورت کو لاحق ہوتا ہے اورعام طور پر سات دن تک ہوتا ہے، اس میں عورتوں کی طبیعت کے لحاظ سے دن گھٹتے اور بڑھتے ہیں۔
نفاس وہ خون ہے جو ولادت کے بعد عورت کو آتا ہے اور چند دن تک رہتا ہے۔
خون کے خارج ہونے کے ایّام میں حیض اور نفاس والی عورت پر شریعت نے تخفیف کی ہے، چنانچہ ان سے نماز اور روزے ساقط ہوجاتے ہیں، البتہ روزوں کی قضاء لازم ہوتی ہے جب کہ پاک ہونے کے بعد نماز کی قضاء نہیں ہے، اس مدّت میں مرد کو جماع کی اجازت نہیں ہے، لیکن اس کے علاوہ فائدہ اٹھا سکتا ہے، جب خون بند ہوجائے تو عورت پر غسل لازم ہے :-
اللہ تعالیٰ نے فرمایا:۔ ((حالت حیض میں عورتوں سے الگ رہو اور جب تک وہ پاک نہ ہوجائیں ان کے قریب نہ جاؤ، ہاں جب وہ پاک ہوجائیں توان کے پاس جاؤ جہاں سے اللہ نے تمہیں اجازت دی ہے))۔(البقرۃ: 222)۔ «تطہرن» کے معنی غسل کرنے کے ہیں۔

مسلمان پر واجب ہے کہ جب وہ حدث اکبر کا شکار ہو جائے تو غسل کرے اور یہ اپنے جسم پر پاک پانی ڈالے، کسی بھی طریقہ سے کرے۔

مسلمان کیسے جنابت یا بڑی ناپا کی سے پاکی حاصل کرے؟

  • مسلمان کے لیے کافی ہے کہ وہ اپنے پورے بدن کو پانی سے دھوئے اور کلیّ کرے اور ناک صاف کرے۔
  • لیکن کمال والی بات یہ ہے کہ وہ استنجاء کرے ایسے ہی جیسے قضائے حاجت کے بعد کرتا ہے، پھر وضو کرے، پھر باقی جسم پر پانی بہائے، کیونکہ یہ بڑے اجر والی بات ہے، اور اس میں نبی ﷺ کی سنت کی مطابقت بھی ہوتی ہے۔
  • جنابت سے جب مسلمان غسل کرے تو اسے وضوء کرنے کی ضرورت نہیں، اور غسل کے ساتھ وضوء لازمی نہیں، لیکن افضل وہ غسل ہے جو وضوء پر مشتمل ہو، جیسا کہ نبی ﷺ کی سنت ہے۔

آسان رہنمائے مسلم

آسان رہنمائے مسلم کی ویب سائٹ کتاب "آسان رہنمائے مسلم" کا الکٹرانک نسخہ ہے۔ یہ شرکۃ الدلیل المعاصر کا ایک پروجیکٹ ہے، جسے زائد از پندرہ زبانوں میں تیار کیا گیا ہے، اور اس کے مشمولات متعدد معیاری الکٹرانک شکلوں میں موجود ہیں۔