طہارت کے معنیٰ

طہارت کے اصل معنی: پاکی، صفائی،ستھرائی. 

اللہ عزوجل نے مسلمان کو اپنے ظاھر وباطن کو پاک کرنے کا حکم فرمایا، چنانچہ وہ اپنے ظاھر کوناپاک اورپلید چیزوں سے پاک کرتا ہے اوراپنے باطن کی شرک، حسد، کبر وغروراور کینہ جیسی قلب کی بیماریوں سے پاک صاف کر کے باطن کو صاف ستھرا رکھنے کا اہتمام کرتا ہے، جب وہ ایسا کرتا ہے تو اللہ کی محبت کا حقدار بن جاتا ہے جیساکہ اللہ تعالیٰ نے فرمایا:۔((اللہ توبہ کرنے والوں کو اور پاک رہنے والوں کو پسند فرماتا ہے))۔ (البقرۃ: 222)۔

اللہ نے نماز کے لیے طہارت کا حکم فرمایا کیونکہ وہ اللہ سے ملاقات اور مناجات کا سبب ہے، اور یہ بات معلوم ہے کہ انسان اس وقت نظافت کا اہتمام کرتا ہےاور اچھے کپڑے زیب تن کرتا ہے جب اسے کسی بادشاہ یا بڑے آدمی سے ملنا ہوتا ہے، تو پھر وہ بادشاہوں کے بادشاہ اللہ سبحانہ وتعالیٰ سے ملاقات کے وقت ایسا کیوں نہ کرے۔

نماز کے لیئے مطلوبہ طہارت کیا ہے؟

اللہ نے مسلمان کو شرعی طہارت کا حکم ديا جب بھی وہ نماز کا یا مصحف چھونے کا یا کعبۂ مشرفہ کے طواف کا ارادہ کرے اور بہت سے موقعوں پر جیسے مصحف کو چھوئے بغیر قرآن پڑھنا، یا دعاء کرنا یا سونا وغیرہ ان اعمال سے پہلے وضوء کرنے کو مستحب بتایا گیا۔

نجاست سے طہارت

  • وہ محسوس چیزیں جن کو شریعت نے ناپاک بتایا اوران سے پاکی حاصل کرنے کا حکم دیا تا کہ عبادت کو انجام دیا جاسکے۔
  • ہر چیزمیں اصل اباحت وطہارت ہے اور نجاست ایک طاری چیزہے، اگرہم کپڑے کی پاکی کے بارے میں شک کریں جب کہ نجاست نہیں پائی جاتی ہوتو یہاں اسے پاک سمجھا جائے گا۔
  • جب ہم نماز کا ارادہ کریں تو بدن اورکپڑوں اور وہ جگہ جہاں نماز پڑھتے ہیں ان کی نجاست سے پاکی وصفائی ضروری ہے۔

ناپاک چیزیں:

1 انسان کا پیشاب اورپاخانہ۔
2 خون (تھوڑا خون معاف ہے)۔
3 جانوروں کا پیشاب اور لید۔ (دیکھو ص230)
4 کتّا اور خنزیر۔
5 مردہ جانور(اس سے مراد وہ تمام مردہ جانورہیں بجز ان کے جنہیں شرعی طریقہ سے ذبح کیا گیا (دیکھو ص232) البتہ مرا ہوا آدمی اورمری ہوئی مچھلیاں اور حشرات یہ سب پاک ہیں۔

نجاست سے پاکی حاصل کرنا:

نجاست جو بدن یا کسی جگہ پر ہو اس کے دھونے کے لیے نجاست کی جگہ سے کسی بھی طریقہ سے نجاست کا زائل ہونا کافی ہے چاہے وہ پانی سے ہویا کسی اور چیز سے ہو، کیونکہ شریعت نے اس کے ازالہ کا حکم دیا ہے، نجاست کے دھونے کے لیے تعداد کی تعیین نہیں کی، بجز کتّے کی نجاست (لعاب، پیشاب اور پاخانہ) کے جسے سات مرتبہ دھونا چاہیے، اس میں ایک مرتبہ مٹّی سے دھونا ضروری ہے، بقیہ نجاستوں کی اصل کا ازالہ کافی ہے، اس کے رنگ اور بو باقی رہنے سے کوئی حرج نہیں جیسا کہ نبی ﷺ نے ایک صحابیہ کوحیض کے خون کو صاف کر نے کے مسئلہ میں ہدایت فرمایا تھا :۔((خون کو دھو دینا کا فی ہے، اس کے باقی رہ جانے والے نشان میں تمہارے لیے کوئی مضائقہ نہیں))۔ (ابو داؤد: 365)

آسان رہنمائے مسلم

آسان رہنمائے مسلم کی ویب سائٹ کتاب "آسان رہنمائے مسلم" کا الکٹرانک نسخہ ہے۔ یہ شرکۃ الدلیل المعاصر کا ایک پروجیکٹ ہے، جسے زائد از پندرہ زبانوں میں تیار کیا گیا ہے، اور اس کے مشمولات متعدد معیاری الکٹرانک شکلوں میں موجود ہیں۔