نماز

نماز کے معنی ٰ   

نماز اصل میں دعاء کو کہتے ہیں، یہ بندے کو اپنے رب اور خالق سے جوڑنے کا ذریعہ ہے، یہ عبودیت کے بلند معانی پر مشتمل ہے، نیز اللہ کی طرف رجوع کرنے اور اسی سے مدد طلب کرنے کا ذریعہ ہے، بندہ اسی کو پکارتا ہے، مناجاۃ(سرگوشی) کرتا ہے، اسے یاد کرتا ہے، اس کے نتیجہ میں اس کا نفس پاک صاف ہوتا ہے اور اپنی حقیقت اور دنیا کی حقیقت کا ادراک کرتا ہے اپنے مولیٰ کی عظمت ا ور اس کی رحمت کا احساس کرتا ہے، یہیں سے یہ نماز اللہ کے دین پر استقامت اور ظلم اور فحش کام اور اللہ کی نافرمانی سے بچنے کی رہنمائی کرتی ہے، اللہ تعالیٰ کا فرمان ہے:۔ ((یقینا ً نماز بے حیائی اوربرائی سے روکتی ہے))۔ (عنکبوت:45)۔

نماز فحش اور منکرات سے روکتی ہے۔

نماز کا مقام اوراس کی فضیلت 

نماز بدنی عبادتوں میں عظیم اور بڑی شأن والی عبادت ہے اور یہ انسان کے قلب، عقل اور زبان کو شامل ہے، نماز کی اہمیت کا اندازہ بہت سی باتوں سےہوتا ہے ان میں سے کچھ یہ ہیں:

نماز کے اعلی منازل:

  1. نماز اسلام کا دوسرا رکن ہے جیسا کہ آپ ﷺ نے فرمایا:۔ اسلام کی بنیاد پانچ چیزوں پر ہے: ((اس بات کی گواہی دینا کہ اللہ کے سوا کوئی سچا معبود نہیں اور یہ کہ محمد اللہ کے رسول ہیں اور نماز قائم کرنا))۔ (بخاری: 8، مسلم: 16) عمارت کا ستون وہی اصل ہوتا ہے جس پر عمارت کی بنیاد قائم ہوتی ہے، اس کے بغیر عمارت نہیں ٹھہرتی۔
  2. شرعی دلائل نے نماز کے قائم کرنے کو کافر اور مسلم کے درمیان فرق کر نے والی چیز بتایا ہے، جیسا کہ نبی ﷺ نے فرمایا:۔ (( بیشک آدمی اور شرک وکفر کے درمیان فرق نماز کا ترک کرنا ہے)) (مسلم: 82) اور فرمایا:۔ ((ہمارے اور ان کے درمیان جو عہد ہے وہ نماز ہے، پس جو اسے ترک کرے اس نے کفر کیا))۔ (ترمذی :2621، نسائى: 463)۔
  3. اللہ عزّوجل نے ہر حالت میں سفرہو یا حضر، حالت امن ہو یا حالت جنگ، صحت مند ہو یا بیمار، بقدر استطاعت اس کو ادا کرنے اور اس کی حفاظت کرنے کا حکم دیا، جیسا کہ اللہ تعالیٰ نے فرمایا :۔ ((نمازوں کی حفاظت کرو ))۔(بقرہ: 238) اور نماز کی محافظت مومن بندے کا وصف بتایا:۔ ((جو اپنی نمازوں کی نگہبانی کرتے ہیں))۔ (المومنون: 9)۔

نماز کی فضیلتیں

نماز کی فضیلت کے بارے میں کتاب وسنت میں بہت سی دلیلیں آئی ہیں، ان میں سے چند ایک یہ ہیں:

  1. یہ گناہوں کو مٹاتی ہے، جیساکہ نبی ﷺ نے فرمایا:۔ ((پانچ نمازیں اور جمعہ سے لے کر جمعہ تک، ان کے درمیان جو خطائیں ہیں ان کے لئے وہ کفارہ ہیں بشرط یہ کہ کبائر کا ارتکاب نہ کرے))۔ ((مسلم: 233، ترمذی: 214)۔
  2. نماز روشنی ہے جو مسلمان کی پوری زندگی کو منور کرتی ہے، خیر کی طرف اس کی رہبری کرتی ہے اور اسے شر سے دور رکھتی ہے، جیساکہ اللہ تعالیٰ نے فرمایا:۔ ((یقیناً نماز بے حیائی اوربرائی سے روکتی ہے))۔ (عنکبوت: 25)۔ اور آپ ﷺ نے فرمایا :۔ ((نما ز روشنی ہے)) (مسلم :223)۔ 
  3. بندے کا قیامت کے دن سب سے پہلا حساب نماز ہی کا ہو گا، اگر وہ ٹھیک نکلی اور قبول ہوگئى تو سارے کام مقبول ہوں گے، اور اگر نماز رد ہوگئی تو باقی اعمال بھی رد ہو جائیں گے، جیسا کہ آپ ﷺ نے فرمایا:۔ ((قیامت کے دن بندے کا سب سے پہلے نماز کا حساب ہوگا، اگر وہ ٹھیک ہوگی تو اس کا سارا عمل ٹھیک ہوگا، اگر اس میں گڑبڑ ہوگی تو اس کا سارا عمل بےکارہوگا))۔ (المعجم الأوسط للطبرانی: 1859))۔

جب مؤمن بندہ نماز میں اپنے رب سےسرگوشی کرتا ہے تو وہ اس کے لیے لذّت والا وقت ہوتا ہے، وہ راحت واطمینان اور اللہ عز وجل کے ساتھ مانوسیت محسوس کرتا ہے۔

  • نبی ﷺ بھی نماز میں بڑی لذّت محسوس کرتے تھے جیساکہ آپ ﷺ نے فرمایا :۔ (( میری آنکھوں کی ٹھنڈک نماز میں ہے)) : (نسائی :3940)۔
  • آپﷺ اپنے مؤذن حضرت بلال ؓ جو نماز کی ندا دیتے تھے، ان سے فرماتے:۔ (( اے بلال ہمیں اس کے ذریعہ راحت دیں ))۔(ابو داؤد: 4985) 
  • نبیﷺ کو جب كوئى معاملہ در پیش ہوتا یا آپ ﷺ کو مشغول کرتا تو نماز کی طرف رجوع کرتے۔(أبو داود: 1319).

آسان رہنمائے مسلم

آسان رہنمائے مسلم کی ویب سائٹ کتاب "آسان رہنمائے مسلم" کا الکٹرانک نسخہ ہے۔ یہ شرکۃ الدلیل المعاصر کا ایک پروجیکٹ ہے، جسے زائد از پندرہ زبانوں میں تیار کیا گیا ہے، اور اس کے مشمولات متعدد معیاری الکٹرانک شکلوں میں موجود ہیں۔