سب سے عظیم ذکر

قرآن اللہ کا کلام ہے اور سب سے عظیم ذکر ہے۔ جب ایک مسلمان قرآن کی تلاوت کرتا ہے اور اس کے معانی میں غور کرتا ہے تو وہ ذکر کرنے والوں میں سے ہوتا ہے۔
قرآن کی عظیم آیتیں اور سورتیں:

آیت الکرسی

یہ قرآن کی سب سے عظیم آیت ہے، جیسا کہ اللہ کے نبی ﷺ نے خبر دیا، کیونکہ یہ اللہ تعالیٰ کی عظمت اور اس کی صفات کمال اور اس کی قدرت سے پر ہے۔

اس کو صبح وشام اور سونے سے پہلے پڑھنا مشروع ہے۔ اور حدیث میں یہ بھی وارد ہوا ہے کہ جواسے سونے سے پہلے پڑھے گا تو برابر اللہ اس کے ليے ایک نگراں مقرر کر دے گا اور شیطان صبح تک اس کے قریب نہیں آ پائے گا۔

اور صلاۃ کے بعد بھی اسے پڑھنا چاہيے، اللہ کے نبی ﷺ نے فرمایا : ((جو آیت الکرسی کو ہر فرض صلاۃ کے بعد پڑھے گا، اس کو جنت میں داخل ہونے سے موت کے سوا کوئی چیز نہیں روک سکتی ہے))۔                       (النسائی الکبریٰ: 9848)

(اللهُ لاَ إِلَهَ إِلاَّ هُوَ الْحَيُّ الْقَيُّومُ لاَ تَأْخُذُهُ سِنَةٌ وَلاَ نَوْمٌ لَّهُ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَمَا فِي الأَرْضِ مَن ذَا الَّذِي يَشْفَعُ عِنْدَهُ إِلاَّ بِإِذْنِهِ يَعْلَمُ مَا بَيْنَ أَيْدِيهِمْ وَمَا خَلْفَهُمْ وَلاَ يُحِيطُونَ بِشَيْءٍ مِّنْ عِلْمِهِ إِلاَّ بِمَا شَاء وَسِعَ كُرْسِيُّهُ السَّمَاوَاتِ وَالأَرْضَ وَلاَ يَؤُودُهُ حِفْظُهُمَا وَهُوَ الْعَلِيُّ الْعَظِيمُ)(البقرة: 255).

(اللهُ لاَ إِلَهَ إِلاَّ هُوَ ) 

(اللہ تعالیٰ ہی معبود برحق ہے جس کے سوا کوئی معبود نہیں)
اللہ ہی وہ ذات ہے جو اکیلی عبادت کی مستحق ہے۔

(الْحَيُّ الْقَيُّومُ)

 (جو زندہ ہے اور سب کا نگراں ہے)
 حی کا معنیٰ یہ ہے کہ اسی کے لئے حیاۃ کاملہ کے تمام معانی ہیں جیسا کہ اس کی شان کے لائق اور زیبا ہے۔ تمام چیزوں پر نگراں ہے، ان کی تدبیر کرتا ہے اور انہیں پختہ کرتا ہے۔

(لاَ تَأْخُذُهُ سِنَةٌ وَلاَ نَوْمٌ)

 (جسے نیند آتی ہے نہ اونگھ)
اسے نیند اور اونگھ نہیں آتی ہے۔

(لَّهُ مَا فِي السَّمَاوَاتِ وَمَا فِي الأَرْضِ)

 (اسی کے لئے زمین و آسمان کی ساری چیزیں ہیں)
 اس کے لئے کائنات کی بشمول زمین آسمان کے ساری چیزیں ہیں۔ وہی بادشاہ اور ان کو پیدا کرنے وا

(مَن ذَا الَّذِي يَشْفَعُ عِنْدَهُ إِلاَّ بِإِذْنِهِ)

 (کون ہے جو اس کے سامنے شفاعت کرے مگر اس کی اجازت سے)
کوئی اس کے سامنے شفاعت کی جرأت نہیں کر سکتا مگر جب اللہ کی اجازت ہو۔

(يَعْلَمُ مَا بَيْنَ أَيْدِيهِمْ وَمَا خَلْفَهُمْ)

 (وہ ان چیزوں کو جو ان کے سامنے اور ان کے پیچھے ہیں جانتا ہے)
وہ ان چیزوں کو جو وہ مستقبل میں کرنے والے ہیں اور ان چیزوں کو جو انہوں نے ماضی میں پیچھے کرکے چھوڑ دیا دونوں کو جانتا ہے۔

(وَلاَ يُحِيطُونَ بِشَيْءٍ مِّنْ عِلْمِهِ إِلاَّ بِمَا شَاء)

 (وہ اس کے علم میں سے کسی چیز کا احاطہ نہیں کر سکتے مگر اتنا ہی جتنا کہ وہ چاہے)
مخلوق میں سے کوئی بھی اللہ کے علم میں سے کسی چیز پر آگاہ نہیں ہوسکتا مگر جتنا کہ اللہ رب العالمین بتا دے اور وقف کر داے۔

(وَسِعَ كُرْسِيُّهُ السَّمَاوَاتِ وَالأَرْضَ)

 (اس کی کرسی آسمانوں اور زمین پر وسیع ہے)
بعض صحابہ نے کرسی کی تفسیر یوں کی ہے کہ: ((اللہ رب العالمین کے دونوں قدم رکھنے کی جگہ ہے جیسا کہ اس کی عظمت اور شان کے لائق اور زیبا ہے۔ اور یہ اللہ کی عظیم مخلوقات میں سے ہے جو زمین وآسمان پر عظمت و کشادگی میں فائق ہے))۔

(وَلاَ يَؤُودُهُ حِفْظُهُمَا)

 (اور اس کی نگرانی اسے تھکا نہیں سکتی)
اللہ رب العالمین پر زمین وآسمان اور جو کچھ اس کے اندر ہے اس کی حفاظت اللہ کو بوجھل نہیں کرتی ہے۔

(وَهُوَ الْعَلِيُّ الْعَظِيمُ)

 (وہ بلند وبالا اور عظمت والا ہے)
وہ تمام مخلوق پر اپنی ذات وصفات میں بلند ہے، عظمت وکبریائی کی تمام صفات کا جامع ہے۔

آسان رہنمائے مسلم

آسان رہنمائے مسلم کی ویب سائٹ کتاب "آسان رہنمائے مسلم" کا الکٹرانک نسخہ ہے۔ یہ شرکۃ الدلیل المعاصر کا ایک پروجیکٹ ہے، جسے زائد از پندرہ زبانوں میں تیار کیا گیا ہے، اور اس کے مشمولات متعدد معیاری الکٹرانک شکلوں میں موجود ہیں۔